رحم دل کون ہے

 رحم دل کیسا ہوتا ہے؟

جتنا وقت ہم لوگوں کی اداس پوسٹس اور سٹیٹس

دیکھ کر ان کے درد کو کریدنے میں لگاتے ہیں۔۔

یا انہیں ان دو چیزوں کی بنیاد پر لمبی لمبی تقریریں لکھ کر پیش کرتے ہیں ۔۔

کیوں نہ اسی وقت کو ان کے درد مند بن کر ان کے دل کا بوجھ ہلکا کر دیا جائے۔۔۔

لیکن نہیں ہمیں مزہ آتا ہے ان کا اندر ٹٹولنے میں۔۔۔

ہم نے یہ کوشش ہی نہیں کی کہ ان کی اذیت کم کرنے کا کچھ سامان بھی ہم ہی نے کرنا۔۔۔

ہمیں لمبی لمبی تسلیاں اور مشورے تو بہت دینے آتے ہیں۔۔۔۔۔

لیکن ہر وقت ان کا استعمال مستفید نہیں ہوتا۔۔۔

ہم نے کبھی یہ سمجھنے کی کوشش نہیں کی دوسروں کا دکھ، تکلیف سن کر بھی ان کے اندر کے ٹوٹے ہوئے شخص کو آپ جوڑ سکتے ہیں۔۔۔

یہ بھی پڑھیں:   میں انمول کتاب میں کیا ہے؟ (مکمل پڑھیں)

#you_can’t_be_a_good_speaker_if_you_aren’t_a_good_listener.

آپ چاہتے ہیں کہ دوسرے آپ کے الفاظ سے جی اٹھیں تو انہیں سنیں۔

ان کی اندر کی ویرانیوں کو آباد کرنا ہے تو واللہ انہیں سنیں۔۔

بغیر جج کیے ان کے پچھتاوے سنیں۔۔

تب مشورے دیں تب نصیحت کریں بلاوجہ ان پر اپنا نظریہ مت تھوپیں ۔۔

اس طرح وہ کبھی اپنے ٹراما سے نہیں نکل سکیں گے۔۔

لوگوں کو سننا شروع کر دیں یقین کریں ڈیپریسڈ لوگوں کی تعداد اور دکھی پوسٹس کی تعداد کم ہو جائے گی ۔۔۔۔

جب میرے پاس ایسا انسان نہیں تھا ۔۔ سومیں نے خود کو خود اٹھایا اور ہر اس انسان کو سننا شروع کر دیا جس کے پاس کوئی نہیں تھا۔۔۔لیکن ہر انسان میں اتنی ہمت نہیں ہوتی کہ وہ خود کسی ٹراما سے نکلے۔۔۔

ایسا سکون کہیں نہیں ملتا۔۔جو لوگوں کو پر سکون کر کے اللہ آپ کو دیتا۔۔

لوگوں کی زندگیاں پہلے ہی بے سکون ہیں۔۔ مزید کہرام مت مچائیں ۔۔

یہ بھی پڑھیں:   ناول کی باتیں

کماز کم اپنے تئیں کوشش کر کہ ایسا انسان بن جائیں ۔کہ آپ سے جڑا ہر شخص کبھی یہ نہ کہے کہ ہر بات ہر کسی سے نہیں کی جا سکتی۔ کم از کم وہ یہ تو کہنے والا ہو کہ ہر بات کسی ایک سے تو کی جا سکتی ہے نا۔۔۔وہ ایک انسان بن جائیں۔۔

یقین جانیں ہزاروں مسائل ختم ہو جائیں گے اوروں کے جب ان کے مسئلے صرف سن لیں گے ان کے بارے میں بغیر غلط آراء قائم کئے۔۔۔۔

از قلم بنتِ نعیم🖋📖 ©

اپنا تبصرہ بھیجیں